Haami bhi na thay, munkir-e- Ghalib bhi nahi thay


Haami bhi na thay, munkir-e- Ghalib bhi nahi thay
hum ehl-e-tazabzub kisi janib bhi nahi thay!!

iss bar bhi Duniya ney Hadaf Hum ko bnaya!
iss bar to hum Shah k msahib bhi nahi thay

Baich aye sir-e-Qariya-e-zar jo Bahr-e-pindaar
Jo Daam miley aisey munasib bhi nahi thay !!!!

mati ki muhabat mein hum aashufta siron ney
wo qurz utarey hein k wajib bhi nahi thay!!

lo deti hoi raat, sukhan kerta hoa din !!!!!
sab uss k liey, jis se mukhatib bhi nahi thay

Iftikhar Arif

Advertisements

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s