Khwab Marte Nahin


Khwab Marte Nahin
Khwab Dil Hain Na Ankhen Na Sansen K Jo
Reza-Reza Hue To Bikhar Jayenge
Jism Ki Maut Se Ye Bhi Mar Jayenge

Khwab Marte Nahin
Khwab To Roshni Hain, Nava Hain, Hava Hain
Jo Kale Pahadon Se Rukte Nahin
Zulm K Dozakhon Se Bhi Phukte Nahin
Roshni Aur Nava Aur Hava K Alam
Maqtalon Main Pohunch Kar Bhi Jhukte Nahin

Khwab To Harf Hain
Khwab To Nur Hain
Khwab Suqraat Hain
Khwab Mansoor Hain

Advertisements

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s